QALB KO USKI RUYAT

Discussion in 'Poetry' started by Bayt-al-Mahabba, Mar 16, 2017.

Draft saved Draft deleted
  1. Bayt-al-Mahabba

    Bayt-al-Mahabba New Member

    Assalamu alaikum,

    Request translation of Hamd by Mufti Azam e Hind into English please.

    قلب کو اس کی رویت کی ہے آرزو جس کا جلوہ ہے عالم میں ہر چار سو

    بلکہ خود نفس میں ہے وہ سُبحٰنَہ عرش پر ہے مگر عرش کو جستجو

    اللّٰہ اللّٰہ اللّٰہ اللّٰہ

    عرش وفرش وزمان و جہت اے خدا جس طرف دیکھتا ہوں ہے جلوہ ترا

    ذرّے ذرّے کی آنکھوں میں تو ہی ضیا قطرے قطرے کی توہی توہے آبرو

    اللّٰہ اللّٰہ اللّٰہ اللّٰہ

    تو کسی جانہیں اور ہر جاہے تو تو منزہ مکاں سے مبرّہ از سو

    علم وقدرت سے ہر جاہے تو کو بکو تیرے جلوے ہیں ہر ہر جگہ اے عفو

    اللّٰہ اللّٰہ اللّٰہ اللّٰہ


    ہے وہ زمان وجہت سے پاک وہ ہے ذمیم صفات سے پاک

    وہ سارے محالات سے پاک وہ ہے سب حالات سے پاک

    لَااِلٰہَ اِلَّا اللّٰہ اٰمنَّا بِرَ سُو لِ اللّٰہ

    اللہ کا علم کائنات کو گھیر ے ہوئے ہے .... اسکا علم ہر شئی کو ، انس وجن ، جسم و جاں ، زماں ، کون ومکاں ، عرش و فرش کو محیط ہے۔





    وہ ہے محیط انس و جاں وہ ہے محیط جسم و جان

    وہ ہے محیط کل زماں وہ ہے محیط کون و مکاں

    لَااِلٰہَ اِلَّا اللّٰہ اٰمنَّا بِرَ سُولِ اللّٰہ

    ہمارا عقیدہ ہے کہ اللہ بخشنے والا ، ظاہر وباطن کاجاننے والا، بادشاہ، بہت پاک ، سلامت رکھنے والا ، امن دینے والا ، نگہبان ، غالب، تقصان کو پورا کرنے والا ، بزرگ ، سب چیز کا پید اکرنے والا ، خلق کو پید اکرنے والا ، صورت بنانے والا، تمام مخلوقات کو روزی دینے والا ، بہت زیادہ جاننے والا، بلند درجہ کرنے والا، دونوں جہاں میں عزت دینے والا ، غرضیکہ تمام خصوصیات وانعامات اور عنایات اسی کی بارگاہ سے ہیں۔ حضور مفتی اعظم نے حق تعالیٰ کے اسمائے مبارکہ کے توسط سے حمد فرمائی ، فرماتے ہیں



    وہ ہے عَز یزُ ومُجِیب و شَکُور وہ ہے بَدِ یعُ وقَرِ یب و صَبُور

    وہ ہے مَتِین و حَسِیبُ وغَفُور وہ ہے مُعِینُ و رَقِیبُ ضرور

    لَااِلٰہَ اِلَّا اللّٰہ اٰمنَّا بِرَ سُو لِ اللّٰہ



    وہ ہے مُقَدِّم اور غَفَّار وہ ہے مُھَیمِن اور جَبَّار

    وہ ہے مُوَ خِّر اور قَھَّار وہ ہے بَاسِط اور سَتَّار

    لَااِلٰہَ اِلَّا اللّٰہ اٰمنَّا بِرَ سُو لِ اللّٰہ



    حَکَم و عَدَل و عَلِیُّ و عَظِیمُ دَیَّا نُ و رَحمٰنُ ورحیم

    قُدُّ و س وحَنَّا ن وحلیِم فَتَّا حُ ومَنَّا نُ وکَرِ یم

    لَااِلٰہَ اِلَّا اللّٰہ اٰمنَّا بِرَ سُو لِ اللّٰہ



    وہ ہے مُقسِطُ و مُعِّزُ و مُذِل وہ ہے حَفِیظُ و نَصِیرُ اے دل

    باد و آتش و آب و گل سب کا وہ ہی ہے فا عل

    لَااِلٰہَ اِلَّا اللّٰہ اٰمنَّا بِرَ سُو لِ اللّٰہ



    قَا بِضُ وبِا عِث و خَا لِق ہے خَا فِضُ و وَارث و رَازِق ہے

    جو ہے اس کا عاشق ہے غیرِ ناطق ناطق ہے

    لَااِلٰہَ اِلَّا اللّٰہ اٰمنَّا بِرَ سُولِ اللّٰہ

    ہر انسان کوکس کی جستجوہے ؟.... کا ئنات کی ہر شئی کو کس کی تلاش ہے ؟....انس وملک ، چرندو پرند ، کائنات کاذرہ ذرہ ، وحوش وطیو ر ، کس کی جستجو میں ہیں ؟.... ہمارا قلب کس کی تلاش میں سر گرداں ہے ؟.... تو مفتی اعظم ہند کہہ اٹھتے ہیں





    سارے عالم کو ہے تیری ہی جستجو جن وانس وملک کو تری آرزو

    یاد میں تیری ہر ایک ہے سو بسو بن میںوحشی لگا تے ہیں ضربات ھُو

    اللّٰہ اللّٰہ اللّٰہ اللّٰہ

    رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی ذات بابرکات کو حضور مفتی اعظم ہند ، نور خدا سے یاد فرمارہے ہیں اور اسی نور کی جھلک دیکھنے کی خواہش ظاہر کررہے ہیں اسلئے کہ ہمارا عقیدہ توحید کیساتھ یہ بھی ہے کہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم نور خدا ہیں



    نورکی تیرے ہے اک جھلک خوبرو دیکھے نوری تو کیوں کرنہ یاد آئے تو

    ان کا سرور ہے مظہر ترا ہو بہو مَن رَ اٰ نِی رَاَ لحَق ہے حق موبمو

    اللّٰہ اللّٰہ اللّٰہ اللّٰہ

    خواب نوری میں آئیں جو نور خدا بُقعَہ نور ہو اپنا ظلمت کدہ

    جگمگا اٹھے دل چہرہ ہوپر ضیا نوریوں کی طرح شغل ہوذکرھُو

    اللّٰہ اللّٰہ اللّٰہ اللّٰہ
     

Share This Page